بارسلونا: ان پڑھ تارکین وطن، سپنش شہریت حاصل نہیں کر پائیں گے

Spanish Citizenship

Spanish Citizenship

پیرس (زاہد مصطفی اعوان) ان پڑھ تارکین وطن، سپنش شہریت حاصل نہیں کر پائیں گے ال پریودیکو اخبار میں تارکین وطن کو سامنا کرنے والے ایک ٹیسٹ سے متعلق ایک رپورٹ شائع کی گئی ہے۔ جس میں سپین کی شہریت کے حصول کے ان خواہشمندوں کی مشکلات کا پیش نظر رکھا گیا ہے۔ جو کہ ان پڑھ ہیں۔

اس حوالہ سے اخبار لکھتا ہے کہ، اگرچہ یہ لوگ تعداد میں ممکن ہےکہ، بہت کم ہوں۔ لیکن ہیں۔ تو ان افراد کی مشکل کا حل نکالا جانا چاہئے۔ اس حوالہ سے بارسلونا کی بار کونسل کے کمیشن برائے تارکین وطن کے ترجمان انتونیو سیگورا کا کہنا ہےکہ، بالکل یہ ایک مشکل موجود ہےکہ، شہریت کے حصول کے خواہشمند ان پڑھ تارکین وطن کا کیا کیا جائے۔

ہمیں اس حوالہ سے وکیلوں کی جانب سے مختلف فون کالز وصول ہو رہی ہیں۔ جن میں اس مسئلہ کا حل نکالنے کیلئے حکومت سے بات چیت کرنے کا کہا جا رہا ہے۔

انتونیو کے مطابق قانون میں ان پڑھ افراد کیلئے کسی بھی قسم کے متبادل حل کا رستہ نہیں دیا گیا۔ اور نہ ہی کہا گیا ہےکہ، ان پڑھ افراد کن کاغذات کی بنیاد پر اپنی شہریت حاصل کرسکتےہیں۔ فائونڈیشن سروی سولیداریو کی وکیل ماریا میینا کے مطابق، کسی شخص کے ہسپانوی معاشرہ میں ادغام سے متعلق اس سے ایک سوال میں جانچا جا سکتا ہے۔

نئے قانون کے بعد ان پڑھ افراد کیلئے پیدا ہونے والی مشکل کا بہترین حل مینا کے مطابق ایک مینول کی طباعت ہے، جس کے بعد امتحان دینے والے افراد باآسانی امتحان دے پائیں گے۔ اور امتحان دینے والے سے سوالات کا معیار مزید واضح اور سب کیلئے یکساں ہونا چاہئے۔

البتہ ایک بات پر تمام لوگ متفق نظر آ رہے ہیں۔ کہ نئے طریقہ کار کے بعد شہریت کے خواہشمندوں کیلئے سوالات یکساں ہو گئے ہیں۔ جو کہ اس سے قبل محکمہ انصاف کے اہلکار پر منحصر تھا کہ۔ وہ جو سوالات چاہے کر سکتا تھا۔