لبریشن فرنٹ برطانیہ کی کال پر انڈین ہائی کمیشن لندن کے سامنے احتجاجی مظاہرہ

Britain Protest

Britain Protest

لندن برطانیہ (تیمور لون سے) ممتاز کشمیری رہنما مقبول بٹ شہید کی بتیسویں برسی کے موقع پر کشمیریوں کی بڑی تعداد نے لندن میں انڈین ہائی کمیشن کے باہر مظاہرہ کیا۔ مظاہرہ جموں کشمیر لبریشن فرنٹ برطانیہ کی کال پر پر کیا گیا جس میں جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی اور جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن برطانیہ نے جموں کشمیر لبریشن فرنٹ برطانیہ کے ساتھ مشترکہ طور پر عظیم کشمیری حریت لیڈر شہید کشمیر مقبول بٹ کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے یکجہتی کا مظاہرہ کیا مظاہرہ کی قیاد ت شہید کشمیر مقبول بٹ شہید کے فرند جناب شوکت مقبول بٹ نے کر رہے تھے۔

مظاہرین نے پلے کارڈز اور بینر بھی اٹھا رکھے تھے جس پر بھارتی ،ظلم ،جبرکے خلاف اور بٹ شہید کا جسد خاکی کی حوالگی کے حوالے سے نعرے درج تھے۔ مظاہرہ کا مقصد جہاں بھارت جو کے دنیا کا سب سے بڑی جمہوریت علمبردار کہلاتا ہے کے مکرہ چہرے کو دنیا کے سامنے لانا تھا وہاں انڈین ہائی میں مقبول بٹ شہید کی باقیات کو کشمیریوں کے حوالے کرنے کا مطالبہ بھی تھا۔

مظاہرہ کے دوران شوکت مقبول بٹ کا کہنا تھا کہ بھارت کشمیریوں کو پھانسیوں پر چڑھا کر اور ان کا ناحق قتل کر کے اپنے لئے جگ ہسائی کا باعث تو بن سکتا ہے لیکن کشمیریوں کی آزادی کے لئے اٹھنے والی آواز کودبا کر انسانوں کی برادری میں اعلی مقام حاصل نہیں کر سکتا۔ پروفیسر ظفرخان، صابر گل ، تحسین گیلانی و دیگر قائدین نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مقبول بٹ شہید کی باقیات کشمیری قوم کے حوالے کی جائیں پوری قوم ان کی منتظر ہے شہید نے جو قوم کو راستہ دکھایا اور اپنی جان دے کر کشمیریوں قوم کو آزادی کا جو شعور بخشا اس پر عمل پیرا رہ کر آزادی کی جدو جہد کو جاری رکھیں گے۔

اس دوران ریاست جموں و مظاہرے کے شرکاء نے کشمیر پر بھارت کے غاصبانہ قبضہ کے خلاف فلک شگاف نعرے بھی لگائے اور لندن کی فضا کئی گھنٹوں تک آزادی ، مقبول بٹ شہید کی باقیات انکی وقم کے حوالے کرنے کے نعروں سے گونچتی رہی مظاہرہ کے اختتام پر شوکت مقبول بٹ ،پروفیسر ظفرخان ،صابر گل ، تحسین گیلانی اور دیگر قائدین کی جانب سے انڈین ہائی کمیشن میں ایک پٹیشن بھی جمع کروائی گئی جس پر ساٹھ سے زیادہ برطانوی ممبران پارلیمنٹ نے اپنے دستخط بھی سبط تھے۔

Britain Protest

Britain Protest