پروفیسر ڈاکٹر خالد محمود کے اعزاز میں الوداعیہ

Khalid Mahmoud-Farewell Party

Khalid Mahmoud-Farewell Party

تحریر : ڈاکٹر محمد ریاض چوھدری
سعودی عرب نے جہاں اقتصادی طور پر ٹرقی کرکے دنیا کی معاشی بڑی طاقت بن گئی ہے وہاں ہر میدان میں ترقی کی منازل طے کر لی ہیں۔ سعودی کتب خانے بھی دن دگنی رات چوگنی ترقی کر چکے ہیں۔ پورے سعودی عرب میں کتب خانوں کا جال بچھ چکا ہے اور لائبریریوں کو منظم اور انفارمیشن ٹیکنالوجی سے مزین کر دیا گیا ہے – سعودی کتب خانوں کی ترقی اور تنظیم میں پاکستانی لائبریرینز کا نہایت اہم رول ہے مملکت کی تعلیمی۔ پبلک اور سپیشل لائبریوں میں ہر ایک کی ترقی کے پیچھے کسی پاکستانی کی کاوش ضرور شامل ہے جس کا آعتراف سرکاری سطح پر بھی کیا جاتا ہے۔

ریاض میں موجود پاکستانی لائبریرینز کے گروپ (PLISA) نے گزشتہ روز مرحبا رسٹورنٹ میں دمام یونیورسٹی کے پروفیسر ڈاکٹر خالد محمود کے اعزاز میں آلو داعی پارٹی کا اہتمام کیا – جس کی کامیابی کا سہرا ڈاکٹر محمد ریاض چوھدری اور شکیل احمد چوھدری کے سر جاتا ہے۔

Khalid Mahmoud-Farewell Party

Khalid Mahmoud-Farewell Party

ڈاکٹر خالد محمود کے ہمراہ دمام یونیورسٹی سے محمد اجمل خان ۔ رانا محمد اقبال ۔ محمد آصف وحید ۔ آصف علی کمال اور کنگ فھد یونیورسٹی سے مرزا مزمل بیگ ۔ میاں محمد طارق۔ آصف الطاف اور پاکستان انٹرنیشنل سکول بریدہ سے ناصر ریاض بھی تشریف لائے جنہوں نےرونق کو دو بالا کر دیا۔

تقریب میں ریاض سے کنگ فھد نیشنل لائبریری سے ڈاکٹر محمد ریاض چوھدری ۔ ملک احمد نواز کنگ سعود یونیورسٹی سے پرویز اسلم برکی ۔ کنگ عبدالعزیز ریسرچ سنٹر سے انعام الحق۔ پرنس سلطان یونیورسٹی سے شکیل احمد ۔محمد تنویر جبکہ کنگ سعود میڈیکل یونیورسٹی سے منظور حسین۔ ممتاز حسین سہتی۔ اکرام الحق اور ضیا الرحمان نے شرکت کی اور میزبان کے فرائض سرانجام دئیے۔

Khalid Mahmoud-Farewell Party

Khalid Mahmoud-Farewell Party

ڈاکٹر محمد ریاض چوھدری نے پروگرام کا آغاز کرتے ہوئے مہمانوں کو خوش آمدید کہا اور فرمایا کہ لائبریرینز علم کے خزینوں کے آمین اور علم کو عام لوگوں تک پہچانے کا فریضہ سرانجام دیتے ہیں ۔ علم و ادب کی ترقی اور ترویج میں وہ ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں جس کا ہر تعلیم یافتہ شخص اعتراف کرتا ہے۔

انہوں نے ڈاکٹر خالد معمود کی پروفیشنل ڈیولپمنٹ میں اہم کردار کو سراہا جہاں انہوں نے پاکستان میں کتب خانوں کے لئے بے شمار خدمات سرانجام دیں وہیں سعودی عرب میں تین سالہ قیام کے دوران یہاں کے پاکستانی لائبریرینز کو نہ صرف آپس کے رابطے بڑھانے میں ممد اور معاون بنے بلکہ اپنے تجربات کی روشنی میں انہیں پروفیشنل گائیڈنس بھی فراہم کی۔

Khalid Mahmoud-Farewell Party

Khalid Mahmoud-Farewell Party

پرویز اسلم خان برکی نے کہا کہ ڈاکٹر صاحب کی سعودی عرب آنے کی خوشی تو تھی ہی اب انکے پاکستان واپس جانے کی بھی خوشی ہے کیونکہ وہ لہد سے لہد تک کی حدیث مبارکہ کے مطابق علم کی تلاش میں سرگرداں رہتے ہیں۔

انہوں نے پاکستان کے تجربات کی روشنی نہ صرف سعودی بلکہ یہاں پر موجود پاکستانیوں کو وطن عزیز میں ہونے والی تکنیکی ترقی سے آگاہی فراہم کی اور یہی علم کو پھیلانا ہماری میراث ہے۔

Khalid Mahmoud-Farewell Party

Khalid Mahmoud-Farewell Party

ہمیں یقین ہے کہ پاکستان جاکر بھی وہ یہاں سے حاصل شدہ علم کے خزانہ کو پاکستان میں پھلائیں گے ۔ ملک احمد نواز نے بھی ڈاکٹر خالد معمود کی ذاتی زندگی اور خاندان کی اعلی ظرفی پر روشنی ڈالی۔

مہمان خصوصی نے ان کی عزت افزائی پر ریاض کے دوستوں کا شکریہ ادا کیا اور پاکستان پہنچ کر بھی رابطے جاری رکھنے کا عزم کیااور فرمایا سعودی عرب میں تکنیکی علم کے تجربات اپنے وطن عزیز کے لائبریرینز تک پہنچانا ہمارا قومی فریضہ ہے۔

اسکے لئے کوئی طریقہ کار وضع کیا جائے گا مثال کے طور پر جب آپ میں سے کسی کا پاکستان آنے کا پروگرام ہو تو وہ ہمیں مطلع کردے گا تاکہ کسی نشست یا سیمینار کااہتمام کیا جا سکے۔ چوھدری شکیل احمد نے تمام مہمانوں کاسب کی تشریف آوری اور پروگرام کی رونق کو دو بالا کرنے پر ان کا شکریہ ادا کیا۔

Khalid Mahmoud-Farewell Party

Khalid Mahmoud-Farewell Party

آخر میں PLISA کی طرف سے جناب ڈاکٹر خالد معمود کو یادگاری شیلڈ ڈاکٹر محمد ریاض چوھدری۔ پرویز اسلم برکی اور ملک احمد نواز نے مشترکہ طور پر پیش کی اور پھر پرتکلف عشائیہ پر محفل اختتام پذیر ہوئی۔

تحریر : ڈاکٹر محمد ریاض چوھدری