جرمنی میں مقیم معروف شاعرہ شازیہ نورین کے ساتھ ایک شام قرطبہ ریسٹورنٹ اینڈ میرج ہال میں منائی گئی

Badalona

Badalona

جرمنی (زاہد مصطفی اعوان سے) جرمنی میں مقیم معروف شاعرہ شازیہ نورین کے ساتھ ایک شام گزشتہ روز بادالونا میں قرطبہ ریسٹورنٹ اینڈ میرج ہال میں منائی گئی۔ جس میں برمنگھم سے آئی ہوئی مہمان شاعرہ ہماخان نے خصوصی شرکت کی۔ تقریب کی صدارت ویلفیئر اتاشی محمداسلم غوری نے کی جبکہ مہمان خصوصی معروف بزنس مین چوہدری امانت مہر تھے۔

اس شام کا اہتمام رائٹرز فورم بارسلونا نے کیا تھا۔تقریب میں مقامی شعراء افضال بیدار،قیس رضوی،ارشد ساحل،نوید سحر،عمران ملک اور دیگر نے اپنا کلام سنایا ۔تقریب کی نظامت کے فرائض شاہداحمد شاہدنے سرانجام دئیے۔تقریب میں سانت آدریا کی خاتون ڈپٹی میئر انا اور سوشلسٹ پارٹی کی امیگریشن سیکٹر کی انچارج ایریکا نے بھی شرکت کی۔

تقریب میں پاکستانی کمیونٹی کی سیاسی ،سماجی اور صحافتی شخصیات کے علاوہ خواتین بھی موجود تھیں ،جنہوں نے شعراء کرام کو انکی شاعری پر بے ساختہ داددی۔تقریب کے اختتام پر مہمان شاعرہ شازیہ نورین ،صبا خان،محمداسلم غوری،چوہدری امانت مہر کو یادگاری تحائف بھی دئیے گئے جبکہ پاکستانی ورکریونین کے صدر جاوید الیاس قریشی اور فیڈریشن دل بائیس کے نائب صدر اور آئی سی وی پارٹی کے سنیئر رہنماء سفیان یونس کو تہنیتی شیلڈز سے نوازا گیا۔ان دونوں حضرات کو یہ شیلڈز پاکستان ایمبیسی میں فیملیز کیسز کو حل کرانے کیلئے کردار ادا کر نے پر دئیے گئے۔

پاکستانی کمیونٹی کے فیملی کیسز حل کرانے کیلئے جاوید الیاس قریشی نے سپین کے محتسب اعلیٰ کو درخواست دیکر اس جانب توجہ دلائی تھی جبکہ اسی مسئلے پر سفیان یونس نے دوبار اسلام آباد میں ہسپانوی ایمبیسی میں جاکر سپینش ایمبیسڈر اور قونصل جنرل سے ملاقاتیں تھیں،جس کا نتیجہ نکلا تھا کہ اسلام آباد ایمبیسی نے پاکستانیوں کے فیملی کیسیز کو جلداز جلد حل کرنا شروع کیا تھا۔