تمام کشمیری برسلز میں 31 مارچ کے مظاہرے میں شامل ہوں، علی رضا سید اور فاروق پاپا کی اپیل

Farooq Papa and Ali Raza Syed

Farooq Papa and Ali Raza Syed

برسلز (پ۔ر) چیئرمین کشمیر کونسل ای یو علی رضا سید اور ورلڈ کشمیر دائس پورہ الائنس کے چیئرمین فاروق پاپانے تمام کشمیریوں اور ان کے ہمدردوں سے اپیل کی ہے کہ وہ مودی کی برسلز آمد پر اکتیس مارچ کے مظاہرے میں شریک ہو کر مقبوضہ کشمیر کے مظلوم عوام سے یکجہتی کا اظہار کریں۔

یہ احتجاجی ریلی برسلز میں یورپی کمیشن اور یورپی کونسل کے دفاتر کے سامنے منعقد ہورہی ہے اوراس کا اہتمام کشمیر کونسل یورپ اورورلڈ کشمیر ڈائس پورہ الائنس کر رہے ہیں۔ اب تک یورپ میں مقیم متعدد کشمیری شخصیات اور تنظیموں اور کشمیریوں کے ہمدردوں نے اس احتجاج کے انعقاد کے سلسلے میں اپنے تعاون کا اعلان کیا ہے۔

ان دونوں تنظیموں کے ایک مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ یورپی کمیشن کو مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی مسلسل خلاف ورزیوں کا نوٹس لینا چاہیے۔

بیان میں یہ بھی کہاگیاہے کہ یورپی پارلیمنٹ کی طرف سے متعلقہ قرارداد، ایمنسٹی انٹرنیشنل ، ایشیا واچ اور انسانی حقوق کی متعدد بھارتی اوردیگر بین الاقوامی گروپوں کی مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی قابض فوج کی جانب سے انسانی حقوق کی پامالیوں پر واضح رپورٹس موجودہیں لیکن بھارت کو انسانی حقوق کی ان خلاف ورزیوں کی کھلی چھٹی ہے اور ان سرگرمیوں کو حکومت کی سیاسی سرپرستی بھی حاصل ہے۔ اس صورتحال کا ذمہ دار سربراہ حکومت ہوتاہے اور مہذب دنیاکو اس صورتحال کو ہرگزنظراندازنہیں کرنی چاہیے۔

چیئرمین کشمیر کونسل ای یو علی رضاسید اور ورلڈ کشمیردائس پورہ الائنس کے چیئرمین فاروق پاپاتمام کشمیریوں اور ان کے حامیوں سے اپیل کی کہ وہ اکتیس مارچ کو احتجاج میں شامل ہوکرمقبوضہ کشمیرکے ان مظلوم عوام کے ساتھ یکجہتی کااظہارکریں جو آٹھ لاکھ بھارتی فوجیوں کی بندوق کے سائے تلے اجیرن اور مظلومانہ زندگی بسر کر رہے ہیں۔