اسلامک ایجوکیشنل اکیڈمی کے زیر اہتمام شاندار مشاعرہ کا اہتمام

Mushaira

Mushaira

پاتے پور (پریس ریلیز) اسلامک ایجوکیشنل اکیڈمی، چک فیض، پاتے پور ضلع ویشالی کے زیر اہتمام ایک شاندار مشاعرہ کا اہتمام کیا گیا۔ جس میں مقامی و بیرونی شعرائے کرام شریک ہوئے اور اپنے کلام سے سامعین کو محظوظ کیا۔مشاعرہ کی صدارت معروف شاعر قیصر صدیقی نے کی جبکہ نظامت کے فرائض نوجوان شاعر کامران غنی صبا نے انجام دئیے۔

ظفر صدیقی اور قوس صدیقی مہمان خصوصی کی حیثیت سے شریک محفل تھے جبکہ ڈاکٹر بسمل عارفی مہمان اعزازی کے طور پر شریک بزم تھے۔ مشاعرہ میں مقبول شہبازپوری، اعجاز عادل، اظہر احمدی، حنیف اختر، مظہر وسطوی، نعمت رضوی، بشر رحیمی، بدرمحمدی، کامران غنی صبا، معین گریڈہوی، ظفر صدیقی، قوس صدیقی، بسمل عارفی اور قیصر صدیقی نے اپنے کلام پیش کئے۔مشاعرہ میں علاقہ کے معروف سیاسی و سماجی رہنمائوں کے علاوہ کثیرتعداد میں باذوق سامعین بھی موجود تھے۔ کنوینر حنیف اختر کے شکریہ کے ساتھ مشاعرہ کا اختتام ہوا۔ قارئین کی خدمت میں شعرا کے منتخب کلام پیش کئے جاتے ہیں۔

مقبول شہباز پوری
شملہ ، مسوری اور نہ کشمیر چاہئے
عاشق ہوں مجھ کو یار کی تصویر چاہئے
اظہر احمدی
عجب چلن ہے مسلماں کا آج کل دیکھو
دلوں میں کفر ہے اسلام لب پہ پلتا ہے
نعمت رضوی
کیا ضروری ہے کہ ہم پوری غزل ہی پڑھ جائیں
ایک ہی شعر بتا دے گا ترے فن کا پتہ
مظہر وسطوی
یہاں ہر چیز نقلی ہے، محبت بھی تعلق بھی
چلو اس بات کا بازار میں اعلان ہو جائے
اعجاز عادل ویشالوی
حوصلہ جس میں نہ ہو جام جھپٹ لینے کا
ایسا انسان تو رہ جاتا ہے اکثر پیاسا
بشر رحیمی
ہوتی نہیں اولاد اب اولاد کی طرح
پیش آتی ہے ماں باپ سے جلاد کی طرح
بدر محمدی
اک شام نکال اگلی ملاقات کی فرصت
مل جائے نگاہوں سے ذرا بات کی فرصت
کامران غنی صبا
وہ سمجھتے ہیں کہ ہر راز ہے پردے میں نہاں
ہم کو معصوم نگاہوں نے بتا رکھا ہے
معین گریڈہوی
کیسے کہہ دوں کہ ملاقات نہیں ہوتی ہے
روز ملتے ہیں مگر بات نہیں ہوتی ہے
ظفر صدیقی
کیوں مجھ کو سیاست کی طرف کھینچ رہے ہو
سب لوگ طوائف سے محبت نہیں کرتے
قوس صدیقی
کبھی بارش کے چھینٹے بے طرح اندر نہیں آتے
کوئی شیشہ دریچہ کا اگر ٹوٹا نہیں ہوتا
ڈاکٹر بسمل عارفی
کیا جائیں ترے شہر میں کس نام سے جائیں
چہرہ تو بڑی بات مکھوٹا بھی نہیں ہے
قیصر صدیقی
میں غزل کی کتاب کا ناظر
تو غزل کی کتاب کا چہرہ

حنیف اختر
کنوینر مشاعرہ