جموں کشمیر ہندوستان اور پاکستان کے درمیان کوئی سرحدی یا زمینی تنازہ نہیں

Jammu  Kashmir

Jammu Kashmir

جدہ (بیورورپورٹ) جموں کشمیر ہندوستان اور پاکستان کے درمیان کوئی سرحدی یا زمینی تنازہ نہیں بلکہ یہ صدیوں پر محیط تاریخ رکھنے والا ایک ملک اور اس پر بسنے والے دو کروڑ انسانوں کے غصب شدہ حقوق کا مسلہ ہے ۔کشمیری قوم نے جموں کشمیرسے ہندوستان اور پاکستان کے جبری قبضے کے خاتمے ،غیر ملکی افواج کے انخلا کے لیے اور غصب شدہ حقوق کی بازیابی کے لیے بے انتہا قربانیاں دیں ۔ جموں کشمیر کی عوام جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے پلیٹ فارم سے شہید کشمیر مقبول احمد بٹ اور ہزاروں شہدا کے راستے پر چلتے ہوئے آذادی کے اس مقدس مشن کی تکمیل تک چیئر مین سردار محمد صغیر خان ایڈوکیٹ کی قیادت میں بغیر کسی بھی قربانی سے دریغ کیے ہوئے جاری و ساری رکھے گی۔

عالمی ادارے انڈین مقبوضہ کشمیراور پاکستانی مقبوضہ کشمیر میں ہندوستان اور پاکستان کی طرف سے کی جانے والی انسانی حقوق کی پامالیوں ،اپنے غصب شدہ حقوق کی بازیابی کے لیے صدائے احتجاج بلند کرنے والوں پر ان کی آواز کو دبانے کے لیے نت نئے قوانین اور ایکٹ لگائے جانے پر نوٹس لیتے ہوئے تمام غاصب افواج کے انخلا کے لیے اپنا کردار ادا کریں تاکہ جنوبی ایشیاء میں امن قائم ہو سکے ۔بصورت دیگر کشمیری اپنی آذادی کے لیے راست اقدام اٹھانے پر مجبور ہوں گے جس سے پورے جنوبی ایشیاء کا امن خطرے میں ہو گاجسکی تمام تر ذمہ داری کشمیر میں غاصب قوتوں اور عالمی اداروں پر ہو گی ۔

ان خیالات کا اظہار جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے ڈپٹی چیف آرگنائیزر امتیاز اسلم چوہدری، گلف زون کے کنوئینر انجئنیر سردار قمر حمید ،صدر سعودی عرب ایاز حسین شاہ نقوی اور آرگنائیزر سعودی عرب حفیظ الزمان نے یہاں جدہ کے دورے پر ہمراہ تنظیمی ساتھیوں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا اس موقع پر انہوں نے سعودی عرب بھر کے کارکنان کو نومنتخب قیادت کے چنائو اور تنظیم سازی کے لیے بھرپور محنت پرمبارک باد اور خراج تحسین پیش کیا ان کا مزید کہنا تھا کہ سعودی عرب سمیت گلف بھر میں تنظیم کوناقابل تسخیر قوت بنائیں گے جو کہ تحریک آذادی کشمیر میں ریڑھ کی ہڈی کا کردار ادا کے گی اور جلد تنظیمی ساتھیوں سے مشاورت کے بعد گلف زون کے کنونشن کی تاریخ کا بھی اعلان بھی کیا جائے گا جو کہ تحریک آذادی کشمیر میں اہم سنگ میل ثابت ہو گا ۔