نامور ایشین صحافی محمد شکیل چغتائی کی رشتہ کی پھپی اور جمال شاہ بیگ کی والدہ پاکستان میں وفات پا گئیں

M. Shakeel Chughtai

M. Shakeel Chughtai

جرمنی (انجم بلوچستانی) برلن بیورو اور مرکزی آفس برلن MCB یورپ کے مطابق گزشتہ دنوںعالمی شہرت یافتہ ایشین صحافی و شاعر،چیف کوآرڈینیٹر PAT یورپ، چیف ایگزیکٹئو اپنا انٹرنیشنل، ورلڈ چیرمین کشمیر فورم انٹرنیشنل ، عالمی سربراہ بین الاقوامی اردو مرکز، مرکزی چیرمین APCA شکاگو/برلن ،محمد شکیل چغتائی، ایشین پریس کلبز ایسوسی ایشن APCA انٹرنیشنل کے سکریٹری جنر ل جمیل چغتائی، اور ثروت احمد،فنانس سکریٹریAPCA انٹرنیشنل کی رشتہ کی پھپی قضائے الٰہی سے راولپنڈی میں اچانک انتقال فرما گئیں۔

مرحومہ قائداعظم یونیورسٹی، اسلام آباد کے سابق کیشئیر خالد بیگ (جمال شاہ بیگ)، میجر زاہد شاہ بیگ، کمال شاہ بیگ، شاہد شاہ بیگ، حامد بیگ، ساجد بیگ،مونا اور بے بی کی والدہ؛ ندیم برلاس، مجاہد برلاس، نجم برلاس، سہیل برلاس، شعیب برلاس، فلاور برلاس اور ناز کامران کی سگی پھپی تھیں۔ جنہوں نے فون،ای میل اورواٹس ایپ کے ذریعہ جمال شاہ بیگ سے تعزیت کی اور اپنے دکھ کا اظہار کیا۔انکے ایصال ثواب کے لئے پاک محمد مسجد، برلن ، جامعہ مسجد منہاج القرآن، برلن اور اکنا دعوہ سنٹر، شکاگو میں جمعتہ المبارک کو فاتحہ خوانی کی گئی۔

اس موقعہ پر شکیل چغتائی نے اپنا انٹرنیشنل کے توسط سے تعزیت بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ”میں اپنی اچانک بیماری، آپریشنز اور اسپتال میں داخلہ کی وجہ سے اس افسوسناک خبر پر اپنے خیالات کا اظہار نہیں کر سکا۔ مجھے پھپی امی کے انتقال کی خبر سن کر انتہائی دکھ ہوا۔

وہ مجھے بہت عزیز تھیں۔جب میں نے پاکستان نیشنل کونسل آف دی آرٹس،اسلام آباد کے ڈرامہ سیکشن میں پروگرام ایگزیکٹئو کی حیثیت سے ملازمت اختیار کی، تو وہاں میرا کوئی ٹھکانہ نہیں تھا۔ لہذا میں ملازمت کے دوران مشرقی جرمنی میں اسکالر شپ ملنے تک ڈیڑھ دوسال انہی کے گھر پر مقیم رہا۔ بلکہ میرے دوست،سابق سکریٹری آرٹس کونسل، کراچی اختر علی خان PNCA میں ملازمت کیلئے تشریف لائے تو انہوں نے بھی کچھ عرصہ میرے ساتھ ہی قیام کیا۔اس دوران انہوںنے جس شفقت کا مظاہرہ کیا اور پورے گھرانے نے میرا جس طرح خیال رکھا،میں اسے کبھی نہیں بھلا سکتا۔

یہ ان کے بچوں کی طرح میرے لئے بھی نقصان عظیم ہے۔میں پھپی امی کی تمام اولاد،قریبی رشتہ ٍداروں، عزیز و اقارب اور ملنے جلنے والوں سے اپنے دل کی گہرائیوں سے تعزیت کرتے ہوئے ان کی مغفرت، نجات اور جنت الفردوس میں اعلیٰ مدارج کے لئے دعا گو ہوں۔ اللہ پاک ہم سب کو اس صدمہء جانکاہ سے نبرد آزما ہونے کی ہمت، طاقت اور صبر کاملہ عطا فرمائے۔آمین۔”