سہ ماہی عربی مجلہ النصیحتہ

قوموں نے مجلات و رسائل کہ ہے ہوجاتی واشگاف حقیقت یہ سے مطالعہ کے تاریخ ہے، کیا ادا کردار اہم میں کرنے بیدار کو انسانیت ہوئی سوئی اور ترقیکی جگر خونِبلا شبہ لٹریچر پاکیزہ ہیں۔

کرتی کام کا سازی افراد اور ہیں، کرتی اثر پر دلوں تحریریں لکهیس تحریکوں بڑی بڑی کام جو ہے کیا کام وہ نے اخبارات و رسائل میں صدی دوپچھل قلم بھی میں دور پسند اورتجدد رفتار تیز اس کے آج سکا، ہو نہ سے انجمنوںاور کی طاقت و رسائل ہیں، ہوتے شائع مجلات ہزاروں میں زبانوں مختلف میں ہندوستان ہے، راورمسلمپائدا جائے کہا قابل کے گننے پر انگلیوں جرائد و رسائل عربی نہیں،لیکن انتہا کوئی کیاخبارات ملک رنگارنگ جیسے ہندوستان نے جنہوں ہیں ہی کرام علماء بھی وہ اور ہوگا، بجا بالکلتو اس بلکہ رکھا جاری پر طور رسمی کو اس صرف نہ اور دیا۔

فروغ کو مجلات عربیمیں کو حقانیت کی اسلام کی، سرزنش پر غلطیوں کی ان جھنجھوڑا، بھی کو عربوں ذریعےکے مولانا قبل صدی نصف تقریباً سے آج خصوصا کیا، نہ گریز بھی برابر ذرہ میںبتانے لکھی کی عليه الله رحمة ندوی محمدالحسنی مولانا اور عليه الله رحمة ندوی علیابوالحسن قائم محاذ خلاف کے عربیہ قومیت نے جنہوں ہے، ہوجاتا اندازہ بخوبی کا اس سے تحریروں آج کہ ہے بات کی مسرتبڑی “النصيحة” پر شہود منصئہ مجلہ عربی ایک نامی اور اوراق، ملٹی عمدہ سرورق، زیب دیدہ جو ہوا، گرجلوہ 80 بڑی ہے، مشتمل پر صفحات مشاورت مجلس کی اس اور سرپرستوں کے اس کہ ہے نصیبیخوش گار روز۔

نابغۂمیں کو جن ہیں اعلیٰ مدیر کے اس ندوی صاحب الدین نعمان مولانا جناب ہیں، موجودہستیاں کی جن ہیں، جاتے مانے شہسوار کے میدان اس وہ اور ہے رہا تجربہ کا اس تک درازعرصہ اس ہیں، ہوچکی عام و خاص مقبول آکر پر عام منظر بھی کتابیں ایک کئی میں زبانعربی سے قلم اشہب کے ان ہیں۔

تحسین قابل واقعی جو ہیں موجود تحریریں کی ان بھی میںشمارے ہیں، ندوی کریمی حماد جناب دین عالم نوجوان ہوئے ابهرتے مدیرایک کے هذامجلہ پچھلےجو5/6 مختلف بگاہے گاہے ، ہیں میں میدان کے وقرطاس قلم برابر سے سالوں کی ان تک اوراب ہیں، رہتے ہوتے شائع مضامین کے ان بھی میں مجلات و اخباراتعربی سلمان سید مولانا جناب کو صاحب مدیر کہ یہ بات اہم ہے، آچکی پر عام منظر کتابیںکئی منسلک سے ہی ان برابر بھی آج اور ہے۔

رہی حاصل سے شروع سرپرستی کی ندویصاحب موضوعات کئی میں مجلے اس ہوئے شائع سے کرناٹکا بهٹکل الإسلام،مرڈیشور مجمعہیں، ہند ازیں علاوہ ہے، گلدستہ جمیل و حسین ایک کا پھولوں کے قسم قسم ہے،گویا گیا چھیڑاکو چار کو مجلے اس بھی مضامین کے فضلاء و ادباء کے ہند بیرون علاوہ کے قلمکاروںکے کی اس سے دھن من تن نے جنہوں قاسمی صاحب عالم شرف جناب ہیں مبارکبادقابل قدر گراں ایک یہ لیے کے والوں رکھنے تعلق سے ادب عربی اور علم اہلالغرض ہے شدہ طے بات یہ کیونکہ گے، لگائیں اندازہ بخوبی سے مطالعے کے اس ہے،قارئینتحفہ یہ کرے) نہ (خدا طرح کی رسائل و دوسرے مجلات ورنہ کی، قدردانوں ہے ضرورتاب۔

بھی زمانے کی بے توجہی کی نذر ہو جائے
اور ناقدری اس کا مقدر بنے.

Al Nasiha

Al Nasiha

Al Nasiha

Al Nasiha

Al Nasiha

Al Nasiha

(عبداللہ دامداابو بھٹک لی ندوی)