سعودی عرب مدینہ شریف مسجد نبوی میں دہشت گردی کے واقعہ پر ویانا کی پاکستانی کمیونٹی کی شدید مذمت

Blast in Saudi Arab

Blast in Saudi Arab

ویانا (اکرم باجوہ) 4 جولائی کو سعودی عرب کے مختلف شہروں خصوصاََ مسجد نبوی میں دہشت گردی بم دھماکوں کے واقعہ پر پاکستانی کمیونٹی کے ہر مکتبہ فکر مذہبی، سیاسی، رفاہی، صحافی، تاجر برادری اور سپورٹس تنظیموں کے نمائندگان نے مدینہ منورہ میں مسجد نبوی میں خود کش دھماکوں کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ہمارئے دل خون کے آنسو رو رہا ہے آج یزید کی باقیات محسن انسانیت تک پہنچنے کی کوشش کر رہے ہیں جس کی حفاظت کیلیئے پوری مسلم دنیا اپنا تن من دھن لگانے کیلیئے ہر وقت تیار ہے۔

پی پی پی آسٹریا کے صدر ندیم خان سینئر نائب صدر حاجی باوا سید غضنفر علی شاہ نے مشترکہ بیا ن میں کہا کہ ہم مسجد نبوی میں دھماکوں کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں اور وقت آگیا ہے پوری اُمت مسلمہ کو اپنے اپنے اختلافات بھول کر ان یزیدوں کا مقابلہ کرنا ہو گا ۔آل پاکستان پریس کلب آسٹریا کے صدر اکرم باجوہ نے مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ وہ لوگ ہیں جنہوں نے حضرت امام حسین علیہ اسلام کو شہید کیا وہ بھی اپنے آپ کو مسلمان کہلاتے تھے۔

العصر اسلامک سنٹر ویانا کے خطیب علامہ صفدر علی صفدری اور جنرل سیکرٹری سید غالب حسین شاہ نے سعودی عرب میں خصوصاََ مسجد نبوی میں دہشت گردی کے واقعہ پر غم وغصہ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ وہ خارجی یزید ہیں جنہوں نے حضرت علی کرم اللہ وجہہ کو مسجد میں شہید کیا ہم سب محسن انسانیت پر مرمٹنے پرہر وقت تیار ہیں اب یہ لوگ ہمارئے گھر پر پہنچ گے ہیں۔

پاکستان عوامی تحریک آسٹریا کے صدر الحاج خواجہ محمد نسیم نے مسجد نبوی بم دھماکوں پر اپنا اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ کسی غیر مذہب کو مدینہ میں جانے کی اجازت نہیں ہے اس کا مطلب ہے یہ بم دھماکہ اُن لوگوں نے کیا ہے جو مسلمانوں کا روپ لیئے ہوئے ہیں کیونکہ دین اسلام تو امن و سلامتی کا مذہب ہے ۔تمام رہنماوں کا کہنا تھا کہ ہم اس مشکل گھڑی میں سعودی عرب کے ساتھ ہیں اور شہید اور زخمی ہونے والوں کے لواحقین کے غم میں برابر کے شریک ہیں۔