سبی کی خبریں 18/11/2015

Opration

Opration

سبی (محمد طاہر عباس) پاکستان تحریک انصاف کے صوبائی چیف آرگنائزر سابق وفاقی وزیر رند قبائل کے سربراہ سردار یار محمد رند نے کہا کہ مری معاہدہ اقتدار کی رسی کشی کے سوا کچھ نہیں بلوچستان کی عوام آج بھی مسائل کا شکار ہے مسلم لیگ ن ہویا نیشنل پارٹی کی حکومت کسی کو بلوچستان کی عوام سے کوئی سررو کار نہیں پہاڑوں اور ملک سے باہر جانے والوں کے ساتھ بامقصد مذکرات پی ٹی آئی ہی کر سکتی ہے آنے والے انتخابات میں عوام کے ووٹوں کی مدد سے اسمبلیوں میں آکر اسلام آباد مے بلوچستان کا مقدمہ لڑیں گے ساحل وسائل پر اختیارات کی بات کرنے والے اقتدار میں آکر سب کچھ بھول بیٹھے ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے چاکر ماڑی ڈھاڈر میں میڈیاسے گفتگو کرتے ہوئے کیا اس موقع پرقاسم خان سوری ، میر ہاشم خان شاہوانی ،دوست محمد مغری کے علاوہ ڈسٹرکٹ پریس کلب سبی کے صدر میر جاوید بلوچ، جنرل سیکرٹری یار علی گشکوری، نائب صدر حاجی سعید الدین طارق، ڈپٹی جنرل سیکرٹری طاہر عباس، فنانس سیکرٹری سید طاہر علی، سینئر صحافی کامران احمد ، مچ کے سینئر صحافی مسعود بلوچ، ڈھاڈر کے صحافی فرید احمد کے علاوہ دیگر قبائلی سماجی سیاسی شخصیات بھی موجود تھے چیف آف رند سردار یارمحمد رند نے کہا کہ مری معاہدہ اقتدار کی رسی کشی کے سوا کچھ نہیں دھائی سالوں میں نیشنل پارٹی کے حکومت کارکردگی سب کے سامنے عیاں ہے مسلم لیگ کی حکومت آنے سے بلوچستان میں کوئی فرق نہیں پڑے گا اور نہ ہی کوئی انقلاب آئے گا میاں صاحب کی حکومت ہو یا کسی اور کی بلوچستان کے حوالے سے ان کی کوئی سوچ فکر نہیں ساحل وسائل کی بات کرنے والوں نے صرف اقتدار کے مزے لوٹے آج تک عوام کے ساتھ کوئی ہمدردی نہیں ہوسکی ساحل وسائل بلوچستان کی محرومیاں مشکلات مسائل اس وقت نظر آتے ہیں جب اقتدار میں نہیں ہوتے اقتدار میں آنے کے بعد بلوچستان کے تمام مسائل نظروں سے اوجھل ہوجاتے ہیں صرف اقتدار کا نشہ طاری ہوجاتا ہے ایک سوال پر سردار یار محمد رند نے کہا کہ تین سال گزرنے کے بعد آب جلاوطن بلوچ یار آرہے ہیں بلوچستان کے مسائل کا حل صرف پی ٹی آئی کے پاس ہے پی ٹی آئی ہی ہوگی جو ناراص دوستوں کو راضی کرکے بلوچستان کی تعمیر ترقی خوشحالی اور مسائل کا خاتمہ کرے گی اوربلوچستان کے مسئلہ کو حل کریں گے انہوں نے کہا کہ عمران خان نے جو ذمہ داریاں دیں ہیں ان کو اپنی صلاحیتوں کو بروئے کار لاکر پورا کروں گا پارٹی الیکشن اور کارکناں کے مسائل کا ازالہ کرنے کے ساتھ ساتھ بلوچستان کے کونے کونے میں پاکستان تحریک انصاف کو فعال منظم کریں گے جبکہ بلوچستان بھر میں تمام آرگنائزر ڈپٹی آرگنائزر سمیت تمام عہدے ختم کردئیے گئے جلد ہی بلوچستان میں صوبائی سلح پر عارضی آرگنائزنگ کمیٹی کا اعلان کروں گا جو دوماہ کے اندر اندر پارٹی انتخابات مکمل کرے گی اور چھ ماہ کے اندار اندر بلوچستان کے ہر چھوٹے بڑے شہروں دیہاتوں میں پارٹی کا سیٹ آپ قائم ہوگا تاکہ آنے والے انتخابات میں حصہ لے کر بلوچستان کے سلگتے مسائل کا حل ممکن ہوسکے انہوں نے کہا کہ بلوچستان قبائل کا گلدستہ ہیں جس میں ہر رنگ نسل قوم قبیلے کے جانباز بہادر جفاکش مہمان نواز لوگ ایماندار لوگ موجود ہیں پی ٹی آئی میں بلوچستان کے ہر قوم قبیلے رنگ ونسل کے لوگ شامل ہیں جن کی تربیت کرنا ہمارا مقصد ہیں بلوچستان پی ٹی آئی میں کسان ونگ قیام کریں گے جو مزدوروں کسانوں محنت کشوں کی آواز بنائے گا اور کسان ونگ کو مکمل فعال کریں گے میری خواہش ہے کہ بلوچستان کا مثالی امن بحال ہو اور باہر جانے والے محنتی افراد بلوچستان میں آکر عوام کی خدمت کریں کیونکہ باہر جانے والوں کا مستقبل بلوچستان ست وابستہ ہے سردار یار محمد رند نے کہا کہ بلوچستان پاکستان کا دل ہے اگر بلوچستان کے ساحل وسائل کو درست انداز سے استعمال کیا جائے تو پاکستان کو کبھی کسی بیرونی ممالک سے امداد کی ضرورت نہیں پڑ سکے گی صوبائی چیف آرگنائز ر سردار یار محمد رند نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف میں آنے والوں کیلئے دروازے کھلے ہیں لیکن چور ڈا، کریشن میں ملوث لوگوں کی ہمیں کوئی ضرورت نہیںبلوچستان میں نئے پاکستان کیلئے عمران خان کے وژن کو عملی جامہ پہنائیں گے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Speech

Speech

سبی ( محمد طاہر عباس) گورنمنٹ بوائر ہائی اسکول ریلوے کالونی سبی میں سالانہ ہفتہ صفائی کے اختتام پر طلباء کی جانب سے کی گئی محنت کو اعزاز دینے کیلئے کلاسز کے مابین نتائج کی روشنی میں تقسیم انعامات کی پروقار تقریب کا اہتمام کیا گیا جس کے مہمان خصوصی کمشنر سبی ڈویژن میر غلام علی بلوچ تھے جبکہ ڈویژنل ڈائریکٹر ایجوکیشن سبی یحییٰ خان مینگل نے تقریب کی صدارت کی پروقار تقریب میں ایڈیشنل کمشنر سبی عظیم انجم ہانبھی ، ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفسیر میر عبدالغفور دشتی ، ڈویژنل ڈائریکٹر ترقیات سبی راجہ وقار الزمان کیانی ، چیئرمین میونسپل کمیٹی سبی حاجی داؤد رند، چیف آفیسر سبی عطاء اللہ لونی ، لوکو فورمین غلام حسین مغل ،ماسٹر طارق الماس ، ماسٹر محمد یونس ، جاوید نظام ، شاہد اقبال۔،ڈسٹرکٹ پریس کلب سبی کے جنرل سیکرٹری یار علی گشکوری، ڈپٹی جنرل سیکرٹری طاہر عباس، فنانس سیکرٹری سید طاہر علی ، ارشاد احمد خلجی کے بوائز وگرلز اسکولز کی پرنسپلز اساتذہ کرام والدین و طلباء طالبات کی بڑی تعداد موجود تھی پروقار تقریب کا باقاعدہ آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا جس کی سعادت حافظ عبدالمالک جبکہ نعت رسول ۖ زاکر علی نے خوب صورت انداز سے پڑھی اسٹیج سیکرٹری کے فرائض الحاج صوفی سلیمان نقشبندی نے سرانجام دئیے پرقار تقریب سے کمشنر سبی ڈویژن میر غلام علی بلوچ، یحییٰ خان ، پرنسپل اسکول ہذا حافظ اسد الحق نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کہ صفائی نصب ایمان ہے جس محنت ولگن سے اسکول کے بچوں نے صفائی کی اہمیت کا اجاگر کرتے ہوئے اپنے اسکول کلاسز روم کو سجایا ہے ہمیں امید ہے کہ روزانہ کی بنیاد پر اسکول اور کلاسزاسی طرح جکمگاتی رہیں گی مقررین نے کہا کہ جب ہم چھوٹے ہوتے تھے تو اسکول آنے سے ڈرتے تھے لیکن اساتذہ کی محنت سے آج اس مقام پر پہنچے ہیں اساتذہ کرم کی عزت کرنے والا ہر مقام پر کامیابی سے ہمکنارہوتا ہے گورنمنٹ بوائز ہائی اسکول ریلوے جن مسائل سے دوچار ہے اس کا ازالہ کریں گے اور وسائل میں رہ کر اسکول کے بچوں کیلئے کلاسز روم لیٹرین پانی کھیل کا میدان سمیت دیگر مسائل کو حل کریں گے اسکول ہذا کے اساتذہ سبی میں تعلیم کے معیار کو بلند کرنے اور بچوں کو اپنی صلاحیتوں سے آگے بڑھانے کا حوصلہ دیں زیادہ تر ٹائم بچوں کی تعلیم وتربیت پر لگائیں اپنے اسکول علاقہ کا نام روش کریں مقررین نے طلباء کو بھی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ وہ محنت و دل لگا کر تعلیم حاصل کریں اور اپنے شہر کا نام روش کریںبعدازان مقابلہ صفائی میں نمایاں پوزیشن حاصل کرنے والے اساتذہ کرام سید گلاب شاہ، محمد یوسف ، لونگ خان پرویز اقبال ، محمد خادم ، محمد علی خجک ، منیر احمد ، غلام سرور ، ظفر اقبال کے علاوہ طلباء کو تعریفی اسناد نقد انعامات سے نوازہ گیا جبکہ کمشنر سبی ڈویژن میر غلام علی بلوچ کو اسکول پرنسپل حافظ اسدالحق نے خصوصی شیڈ پیش کی واضح رہے کہ مہمانوں کی آمد پر اسکول ہذا کے اسکاوٹ طلباء نے سلامی پیش کی اور پھولوں کی پتیان نچھاور کی تمام مہمانوں نے کلاسز روم کا تفصیلی معائنہ بھی کیا اور طلباء کے جوش جذبے کو سراہا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

سبی ( محمد طاہر عباس) حادثہ یا تخریب کاری کوئٹہ سے راولپنڈی جانے والی جعفر آیکسپریس کی بریکیں فیل ہوجانے سے آب گم کے علاقہ میںالٹ گئی ڈرائیور ،اسسٹنٹ ڈرائیور دوپولیس اہلکاروںسمیت دس12 افراد جان بحق سے200 زائد مسافر زخمی متعدد مسافروں کی حالت نازک مچ سبی ڈھاڈر کوئٹہ کے ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافد وفاقی وزیر ریلوے نے تحقیقات کا حکم دیدیا پاک افواج ایف سی امدادی ٹیموں کی کاروائیاں رات گئے تک جاری مسافر ٹرین ڈرائیور کی لاش رات گئے بھی نہ نکل سکی کوئٹہ ریلوے سیکشن کئی گھنٹے بند حادثہ کی تحقیقات کا حکم وفاقی وزیر ریلوے وزیر اعلیٰ بلوچستان ، سردار یار محمد رند، پیر الحاج صاحبزادہ محمد خالد سلطان القادری کی جانب سے اظہار افسوس تفصیلات کے مطابق کوئٹہ سے وارلپنڈی جانے والے جعفر ایکسپریس ضلع بولان کے علاقہ آب گم کے مقام پر انجن نمبر 5116کی بریکیں فیل ہوجانے کے باعث الٹ گئی جس کے باعث انجن سمیت تمام بوگیاں تباہ ہوگئی حادثہ کے باعث مسافر ٹرین کے ڈرائیور محمد ایوب ،اسسٹنٹ ڈرائیورمحمد اقبال وسیم،ڈیوٹی ڈرائیور قمر عباس ، چارج مین رضوان احمد، فیض اللہ ولد عبدالستار،ٹرین فیٹر محمد امین رخشانی، محمد یونس ولد عبدالطیف ، محمد اسماعیل ثاقب ولد اللہ واسیہ ، بی بی سفییہ دختر امین قیصر، بی بی آمھہ زوجہ محمد امین ، بی بی سیکنہ زوجہ افضل ، محمد امین ولد قاسم ، شکیل احمد سمیت 12مسافر موقع پر جان بحق ہوگئے جن میں ریلوے ایف سی اور پولیس اہلکاروں سمیت مسافر شامل ہے جبکہ مشتاق مسعود ، وسیم ، محمد رحیم سمیت 200سے زائد مسافر ذخمی ہوئے جن میں سے متعدد مسافروں کی حالت نازک تبائی جاتی ہے جعفر ایکسپریس کو حادثہ پیش آنے کی اطلاع ملتے ہی سبی کوئٹہ سے امداد ی ریلوے ریلیف ٹرین پاک افواج ایف سی کی امدادی ٹیمیں روانہ کی گئی تاہم حادثہ کے موقع پر مقامی لوگوں اور مسافروں نے اپنی مدد آپ کے تحت ذخمیوں کو ٹرین سے نکالااور طبی امداد کیلئے قریبی ہسپتالوں میں لے جایا گیا مذکورہ مسافرٹرین حادثہ کی اطلاع ملنے پر پاک افواج کے آفیسران ڈی ایس کوئٹہ فیض محمد بگٹی، ڈپٹی کمشنر بولان محمد اسلم سومرو ، سبی اسکاوٹس 68ونگ کرنل کاشاں ، ڈی پی او بولان پولیس لیویز ایف سی کی بھاری نفری کے ہمراہ پہنچے اور امدادی کاموں میں حصہ لیا ذخمیوں کو پاک افواج کے ہیلی کاپٹرز ایمبونسز اور گاڑیوں کے زریعے ہسپتالو میں لے جایا گیا جبکہ مچ ڈھاڈرسبی کوئٹہ کے ہسپتالوں میںایمرجنسی نافذ کردی گئی عینی شاہدین کے مطابق حادثہ کے بعد ہر جانب چیچ وپکار تھی لوگ اپنی مدد آپ کے تحت امدادی سرگرمیوں میں حصہ لے رہے تھے حادثہ کا شکار ہونے والی مسافر ٹرین کا درائیور محمد ایوب دوماہ بعد ریٹائرڈ ہونے والا تھا، وفاقی وزیر ریلوے سعد رفیق نے جعفر ایکسپریس کے حادثہ کی تحقیقات کا حکم دیدیا جبکہ وزیر اعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبدالماک بلوچ، صوبائی وزیر صحت بلوچستان رحمت صالح بلوچ، پاکستان تحریک انصاف صوبائی کے چیف آرگنائزر سردار یار محمد رند، جماعت الصالحین پاکستان انٹرنیشنل کے بانی و قائد الحاج صاحبزادہ پیر خالد سلطان القادری سروری نے آب گم میں ہونے والے ترین حادثہ میں جان بحق ہونے والے کے لواحقین اور ذخمیو ں ہونے والوں دلی ہمدردی کا اظہار کیا واضح رہے کہ بولان کی قدیم ترین دشوارگزر ریلوے ٹریکس تاج برطانیہ نے روس کے خلاف اپنی طاقت مستحکم کرنے کیلئے دفاعی نقطہ نظر کے تحت میں 1880مکمل کی تھی کولپور سے آب گم کی طرف ڈھلوان ہونے کی وجہ سے گاڑیوں کے بے قابو ہوکر اسٹیشن میں گھس جانے کے خطر ے کے پیش نظر کولپور سے آب گم تک چار کیچ سائنڈنگ بنائی گئیں ہیں گزشتہ135 سالوں میں ہونے والے بے شمار حادثات نے یہ بات ثابت کردی ہے کہ کیچ سائنڈنگ اور سلپ سائنڈنگ کی تعمیر قریبی اسٹیشنوں کیلئے ضروری تھی گزشتہ35 سال کے دوران صرف مچ آب گم اسٹیشن پر مال گاڑیوں کے اوورشوٹ ہوکر کیچ سائنڈنگ پر چڑھنے کے متعدد واقعات بھی ہوچکے ہیں جن میں کم وبیش12 افراد جان بحق ہوئے ہیں۔