شریعت و طریقت کو سمجھنے کے لیے تعلیمات غوث اعظم پر عمل پہرا ہونے کی ضرورت ہے

Pir Tayyab u Rehman Qadri

Pir Tayyab u Rehman Qadri

برمنگھم (ایس ایم عرفان طاہر سے) شریعت و طریقت کو سمجھنے کے لیے تعلیمات غوث اعظم پر عمل پہرا ہونے کی ضرورت ہے ،تصوف اور ولایت کے لیے علم ضروری ہے اولیا ء عظام اور علماء و مشائخ کی صحبت اختیار کرنے والا کبھی گمراہی و بے راہ روی کا شکار نہیں ہوتا ہے، عیدمیلاد ہو یا جشن نزول قرآن محفل ایصال ثواب ہو ختم کل یا گیا رہویں شریف تمام مذہبی محافل اور اجتما عات کا مقصد اللہ سے دعا مانگنا ہے۔ ان خیالات کا اظہار علماء کرام اور مشائخ عظام نے سالانہ عظیم الشان حضرت غوث اعظم الشیخ سید عبد القادر جیلانی کانفرنس کے شرکاء سے خطابات کرتے ہوئے کیا۔

چیئرمین قادری ٹرسٹ برطانیہ صاحبزادہ پیر محمد طیب الرحمن قادری کی زیر سرپرستی قادریہ ٹرسٹ مسجد و کمیونٹی ایجوکیشن سنٹر میں منعقدہ کانفرنس کی صدارت مفتی اعظم برطانیہ محمد گل رحمن قادری نے کی جبکہ اس موقع پر صاحبزادہ مفتی برکا ت احمد قادری چشتی ، علامہ پیر محمدتبسم بشیر اویسی ، صاحبزادہ پیر محمد احمد زمان نقشبندی جما عتی ، قاری محمد سلیم نقشبندی ، مولانا عبد المجید قادری ، مولانا محمد ضیاء الاسلام ہزاروی ،مولانا محمد اسد اللہ سیفی ، حاجی محمد رمضان ، حاجی منیر حسین ، علامہ فیصل جاوید اقبال ، قاری محمد الطاف ، قاری محمد تنویر اقبال قادری ، محمد علی قادری ، حافظ محمد ناصر صدیقی ، حافظ محمد قاسم صدیق چشتی ، اشتیا ق احمد ، ذوالفقار علی ،حاجی محمد خالد حسین،حاجی طارق لوہار ،محمد ثاقب اور دیگر بھی موجود تھے۔ چیئرمین قادریہ ٹرسٹ برطانیہ صاحبزادہ پیر محمد طیب الرحمن قادری نے کہاکہ کسی ولی کامل کو دیکھ کر اللہ کی یاد تا زہ ہوجا تی ہے اللہ کے ولی کے ظاہر و باطن سے شریعت کا رنگ جھلکتا ہوا دکھائی دیتا ہے۔

صاحبزادہ مفتی برکات احمد چشتی نے کہاکہ با دشاہ صدور اور وزراء اعظم اپنے اپنے دور میں حکومت کرتے اور پھر ماضی کے جھرونکوں میں فنا ہوجا تے ہیں جبکہ اولیاء اللہ کے مزارات پر ہمیشہ چاہنے والوں کی بھیڑ دکھائی دیتی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ غوث اعظم شاہ عبد القا در جیلانی میں نبوت و رسالت کے سوا تمام وصف اور خوبیاں پائی جاتی تھیں ۔ انہوں نے کہاکہ جو میڈیا اور ایڈورٹائز منٹ کے زریعہ سے بڑا عالم و پیر بننا چاہتے ہیں تو وہ دین کے سوداگر ہیں ۔انہوں نے کہاکہ لوگوں نے پیری فقیری اور مولویوں کو مزاق بنا دیا ہے جبکہ یہ سب سے مشکل ترین منصب ہے ۔علامہ پیر محمدتبسم بشیر اویسی نے کہاکہ نظام کائنا ت میں کوئی کام بھی بغیر وسیلہ کے نہیں ہو تا ہے۔

انہوں نے کہاکہ تمام محافل و مجالس کا حصول قرب الہی اور دعا مانگنا ہی ہوتا ہے اللہ والوں کی محفل کے صدقے اللہ اپنے بندوں کو بخشش و مغفرت اور نعمت و برکت سے ضرور نوازتا ہے ۔انہوں نے کہاکہ گیا رہویں شریف کی نسبت پیران پیر حضرت غوث اعظم الشیخ سید عبد القادر جیلانی سے ہے جس میں کوئی بھی کام خلاف شرع نہیں ہوتا بلکہ قرآن و حدیث سے استفا دہ کیا جاتا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ اللہ رب العزت نے مزارات اولیاء کرام کو جنت کے باغات میں سے باغ قرار دیا ہے جہا ں کھڑے ہو کر دعا مانگنے والوں کی دعا کو شرف قبولیت نصیب ہوتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کوئی بھی چیز دنیا میں قضاء کو نہیں بدل سکتی ہے جبکہ صرف اور صرف دعا ہے جو انسان کی لکھی ہو ئی تقدیر بھی بدل دیتی ہے۔

انہوں نے کہاکہ گیا رہویں والے کے صدقے دریائے دجلہ میں ڈوبی ہوئی بیڑی پار لگ گئی اور جب امیر ملت پیر سید جماعت علی شاہ نے دعا مانگی تو اللہ رب العزت نے ہمیں اسلامی جمہو ریہ پاکستان جیسی نعمت سے نوازا ۔اس مذہبی و روحانی کانفرنس سے قاری محمد سلیم نقشبندی ، مولانا عبد المجید قادری ، صاحبزادہ پیر احمد زمان جما عتی ،مولانا ضیاء الاسلام ہزاروی ، حاجی محمد رمضان ، علامہ فیصل جاوید اقبال ، حافظ محمد ناصر صدیقی اور دیگر نے بھی خطابا ت کیے جبکہ کانفرنس کے اختتام پر با العموم تمام اولیاء عظام باالخصوص مفتی غلام رسول سعیدی اور پیر محمد چشتی کے لیے خصوصی دعا کے بعد لنگر غوثیہ بھی تقسیم کیا گیا۔