ٹریفک وارڈنز ذمہ داریاں نبھانے کے بجائے خوش گپیاں لگا کر وقت گزارنے لگے

Traffic Wardens

Traffic Wardens

وزیرآباد (نامہ نگار) ٹریفک وارڈنز پیشہ ورانہ ذمہ داریاں نبھانے کے بجائے سڑکوں کنارے کرسیاں لگا کر اور ٹولیوں کی شکل میںڈیوٹی کے وقت کسی خاص مقام پربیٹھ کر خوش گپیاںلگا کر وقت گزارنے لگے ہیں جبکہ اہم چوراہوں اور مقامات پر روزانہ بد ترین ٹریفک جام رہنے سے شہریوں کی زندگی اجیرن ہوتی جا رہی ہے۔۔

ٹریفک وارڈنز کی ناقص حکمت عملی کی وجہ سے شہر میں آئے روز ٹریفک کا جام رہنا اور حادثات ، لڑائی جھگڑوں کے واقعات میں اضافہ معمول بن چکا ہے۔وارڈنز کا اپنی ڈیوٹیوں سے غائب رہنا شہریوں کیلئے عذاب کی حیثیت اختیار کرگیاہے۔ تفصیلات کے مطابق روزانہ ہزاروں شہری اپنی گاڑیوں اور موٹرسائیکلوں پر اپنی ضروریات زندگی کی غرض سے وزیرآباد شہر میںو اقع مختلف مارکیٹوں اور دفاتر وغیرہ کا رخ کرتے ہیں مگر راستوں میں ٹریفک وارڈنز کی ناقص حکمت عملی اور لاپروائی کی وجہ سے جگہ جگہ کاروں، پراڈ و گاڑیوں اور بااثر افراد کے کاروباری مقامات کے سامنے گاڑیوں کی غلط پارکنگ، ناجائز اسٹینڈز کے قیام جیسے امور کی وجہ سے ٹریفک جام ہونے سے منٹوں کا سفر گھنٹوں میں کرتے ہوئے ٹریفک کے نظام کو کوستے ہوئے نظر آتے ہیں۔

وزیرآباد میں تعینات کئے جانے والے وارڈنز کی بڑی تعداد مقامی نوجوانوں کی ہے جو بار بار وزیرآباد میں اپنی تعیناتی کرواکے وقت گزاری کا مشغلہ اختیار کئے ہوئے ہیں۔ٹریفک وارڈنزٹریفک کی روانی کو قائم رکھنے کی بجائے وہاں پر تعینات ٹریفک وارڈن ٹولیوں کی طورت میں کسی بھی وقت رش سے باہر کسی مقام پر نمودار ہوتے ہیں چالان کا ٹارگٹ مکمل کرنے کے بعدمخصوص مقامات پر اکٹھے ہو کرخوش گپیاں لگانے میں مصروف رہتے ہیں یا پھر مختلف دکانوں میں بیٹھ کر شہریوں کے ٹریفک میں پھنسنے کا تماشا دیکھنے کے ساتھ ساتھ موبائل فون پر باتیں کرتے ہوئے گانے سنتے رہتے ہیں۔ واضح رہے کہ ٹریفک وارڈنز کی نااہلی کی وجہ سے شہرمیں ٹریفک کا جام رہنا معمول بن چکا ہے اکثر اسی وجہ سے سرکاری ملازم ٹریفک جام کی وجہ سے وقت پر دفاتر،مریض ہسپتالوں میںنہیں پہنچ پاتے۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ وارڈنز سے ٹریفک کنٹرول نہیں ہوتی مگر یہ پڑھے لکھے، وارڈنز ناکوں پر بدتمیزی بھی کرتے ہیں اور بلاوجہ ناجائز چالان بھی کیے جاتے ہیں جس کی شکایات اعلیٰ افسران تک بھی کی ہیں مگر ان کے خلاف کسی قسم کی کارروائی نہیں کی جاتی اور نہ ہی شہر بھر میں ٹریفک کا نظام بہتر کیا جاسکا ہے۔ شہریوں نے ٹریفک کے سسٹم کو ہنگامی بنیادوں پر بہتر بنانے کیلئے وزیراعلیٰ پنجاب سے اس کا فوری طور پر نوٹس لینے کی اپیل کی ہے۔